بھارت میں ایک اور تاریخی مسجد کو شہید کرنے کی سازش تیار

403

بھارت میں بی جے پی کی انتہا پسند حکومت آنے کے بعد مسلمانوں پر زمین تنگ کی جا رہی ہے، اب ایک مرتبہ پھر بابری مسجد کے بعد قطب مینار کمپلیکس میں واقع ایک اور تاریخی مسجد کو شہید کرنے کی سازش تیار کی جا رہی ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق نئی دہلی کی قوت الاسلام مسجدکے خلاف دہلی کی عدالت میں مقدمہ دائر کر دیا گیا ہے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ قطب مینار کمپلیکس کے احاطے میں موجود قوت الاسلام مسجد، مندر کمپلیکس کی جگہ بنائی گئی، مسجد کی جگہ مندر کمپلیکس کو بحال کیاجائے۔

خیال رہے کہ نئی دہلی کی قوت الاسلام مسجد تاریخی قطب مینار کے نزدیک واقع ہے۔

درخواست میں دعویٰ کیا گیاہےکہ قطب مینار کمپلیکس ماضی میں جین اور ہندو مندروں پر مشتمل تھا، مسلمان بادشاہ قطب الدین ایبک نے 27 مندروں کو مسمار کرکے مسجد تعمیر کی۔

عدالت سے درخواست کی گئی ہے کمپلیکس میں ہندو اور جین دیوتاؤں کی مورتیوں کو بحال کیا جائے اور ان کی پوجا کی اجازت دی جائے۔ درخواست کی سماعت 24 دسمبر کو ہوگی۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس 9 نومبر کو بھارتی سپریم کورٹ نے بابری مسجد کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے مسجد کی زمین ہندوؤں کے حوالے کرتے ہوئے مرکزی حکومت کو مندر تعمیر کرنے کا حکم دیا تھا۔