زہرہ کے بادلوں میں زندگی کا ایک اور اہم ثبوت دریافت

12

نئی دہلی: بھارتی سائنسدانوں نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے سیارہ زہرہ کی فضاؤں میں زندگی سے تعلق رکھنے والا ایک اہم سالمہ ’’گلائسین‘‘ دریافت کرلیا ہے۔

یہ سادہ ترین امائنو ایسڈ ہے جو زمینی جانداروں کے تیار کردہ پروٹینز میں عام موجود ہوتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ سیارہ زہرہ پر گلائسین کی دریافت کو زندگی کا ایک اور اہم ثبوت قرار دیا جارہا ہے۔

واضح رہے کہ قدرتی طور پر تقریباً 500 امائنو ایسڈز پائے جاتے ہیں مگر ان میں سے صرف 20 ایسے ہیں جو ڈی این اے میں موجود ہدایات (جینیٹک کوڈونز) پر عمل کے نتیجے میں بنتے ہیں۔ گلائسین بھی انہی میں سے ایک ہے۔

بھارتی ماہرین کا یہ تحقیقی مقالہ ’’آرکائیو ڈاٹ آرگ‘‘ (ArXiv.org) کی پری پرنٹ ویب سائٹ پر شائع ہوا ہے، جس کا مطلب یہ ہے کہ ابھی تک اس دعوے کو دیگر ماہرین نے درست ہونے کی باقاعدہ سند نہیں دی ہے۔

گزشتہ ماہ سائنسدانوں کی ایک ٹیم نے سیارہ زہرہ کی فضاؤں میں زندگی سے تعلق رکھنے والی ایک اہم گیس ’’فاسفین‘‘ کی موجودگی کا انکشاف کیا تھا جس کے بعد زمین کے علاوہ کسی اور سیارے پر زندگی کے وجود سے متعلق بحث ایک بار پھر تازہ ہوگئی۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.