نیب اب بھی کامیاب نہ ہوا تو اہمیت کھو دے گا : شیخ رشید احمد

واضح کہہ چکا ہوں کہ ٹارزن کی بڑے پیمانے پر واپسی ہو کر رہے گی اور اسے کوئی نہیں روک سکتا ، اس مرتبہ ٹارزن وکٹ کے دونوں طرف دیکھے گا اور سرکاری اور غیر سرکاری دونوں زد میں آئیں گے
لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک، خبر ایجنسیاں) وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے ٹرانسپورٹیشن ٹرین کے کرایوں میں 10 فیصد کمی کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ پسنجر ٹرین آپریشن کی بحالی کے لئے اپنا کیس نظر ثانی کےلئے پیش کرنے جارہے ہیں اور امید ہے کہ عید الفطر سے قبل ٹرینیں چلانے میں کامیاب ہو جائیں گے ، واضح کہہ چکا ہوں کہ ٹارزن کی بڑے پیمانے پر واپسی ہو کر رہے گی اور اسے کوئی نہیں روک سکتا ، اس مرتبہ ٹارزن وکٹ کے دونوں طرف دیکھے گا اور سرکاری اور غیر سرکاری دونوں زد میں آئیں گے ،اگر اب بھی نیب کامیاب نہ ہوا تو اپنی اہمیت کھو دے گا ۔
انہوں نے کہا کہ جس دن چینی کی فرانزک رپورٹ آئی وزیر اعظم عمران ایکشن لیں گے کیونکہ اس پر ایکشن لینا مجبوری ہے۔ کورونا کے بعد ورلڈ آردر تبدیل ہوتا ہوا دیکھ رہا ہوں ،کشمیر کے حالات پاکستان اور بھارت کے درمیان چھوٹے بڑے تصادم کا باعث بن سکتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے ریلوے ہیڈ کوارٹر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا ۔ شیخ رشید احمد نے کہا کہ نیب شہباز شریف سے جو بھی سوال پوچھتا ہے تو وہ کہتے ہیں میں کاغذ لندن میں بھول آیا ہو ں لیکن مجھے نہیں لگتا کہ انہیں لندن جانے کی اجازت ملے گی ۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ اور چین دونوں ایک دوسرے پر الزامات لگا رہے ہیں اور یہ سنجیدہ ہوتے جارہے ہیں۔
پاکستان جغرافیے کا سب سے اہم ملک ہے اور اس کی ذمہ داریاں بڑھنے جارہی ہیں ۔ ایسے حالات میں بھارت شرار ت کر سکتا ہے ، اس نے کشمیر میں دوبارہ آگ لگانا شروع کر دی ہے جبکہ بھارت کی مختلف ریاستو ں میں بھی مسلمانوں کا جینا مشکل کردیا گیاہے ، کشمیر کے حالات پاکستان اور بھارت کے درمیان چھوٹے بڑے تصادم کا باعث بن سکتے ہیں ۔ مودی کی بھول ہے کہ وہ پاکستان کو کوئی نقصان پہنچا سکتا ہے۔ آج دنیا کی جغرافیائی پالیسی اور مسلمانوں پر ظلم و ستم کی و جہ سے ہماری زیادہ پذیرائی ہے۔
انہوں نے کہا کہ جس دن چینی کی فرانزک رپورٹ آئی وزیر اعظم عمران خان ایکشن لیں گے ، یہ پراپیگنڈا ہے کہ کوئی ایکشن نہیں ہوگا ، ایکشن لینا وزیر اعظم عمران خان کی عوام سے کمٹمنٹ کی وجہ سے مجبوری ہے۔ آئی پی پیز کا معاملہ زیر بحث ہے اور کمیشن کے انچارج کےلئے کسی جج صاحب کا تقررہونا ہے ، یہ اتنی جلدی نہیں ہوگا اوراس میں پانچ سے چھ ماہ لگ سکتے ہیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے